ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کے مطابق سی سیکشن کی شرح

ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کے مطابق سی سیکشن کی شرح زیادہ سے زیادہ 10% سے 15% تک ہونی چاہیے جبکہ اس سے زیادہ ایمرجنسی کے زمرے میں آتا ہے

پاکستان میں یہ شرح 30% سے تجاوز کر چکی ہے جسکی تین وجوہات ہیں 

1- لیبر پین کا خوف
2-پلانڈ ڈیلیوری
3- میڈیکل بزنس

یہ وجوہات مختلف کیسسز کو جاننے کے بعد میں نے نکالی ہیں ۔۔۔ کچھ کیسسز میں ڈاکٹرز کی طرف سے غیر ضروری طور پر سی سیکشن کا مشورہ دیا جاتا ہے اور بعض کیسسز میں لوگ نیچرل ڈیلیوری سے زیادہ سی سیکشن کو ترجیح دیتے ہیں کیونکہ اس میں ایمرجنسی نہیں ہوتی پلان کرکے آپریشن کی تاریخ بتا دی جاتی ہے ۔۔۔ جبکہ کچھ خواتین لیبر پین کے خوف سے سی سیکشن کو ترجیح دیتی ہیں ۔۔۔۔

اس بڑھتے رجحان کو روکنے اور سی سیکشن کی پیچیدگیوں کے حوالے سے آگاہی مہم کا آغاز کرنا چاہتی ہوں ۔۔۔ اگر کوئی ہیلتھ پروفیشنل یا این جی او اس مقصد پہ کام کررہے ہیں تو مینشن کر دیجئے ۔

اس کے لیے اگر ڈور ٹو ڈور کیمپین بھی کرنا پڑی تو اس کا حصہ ہوں گی ۔

کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں